A A A A A
Bible Book List

یسعیاہ 57Urdu Bible: Easy-to-Read Version (ERV-UR)

اسرائیل۔ خدا کی نہیں سنتا ہے

57 اچھے لوگ چلے گئے لیکن اس پر تو کسی نے توجہ نہیں دی،کسی نے اس کے بارے میں نہیں سو چا کہ اصل میں کیا ہو رہا ہے۔
وفادار لوگوں کو اٹھا لیا گیا۔
    لیکن کسی شخص نے محسوس تک نہیں کیا

کہ اچھے لوگوں کو
    مزید بُرائیوں سے بچنے کیلئے اٹھا لیا گیا۔
ان اچھے لوگوں کو سلامتی ملے گی۔
    وہ لوگ جنہو ں نے راستبازی کے ساتھ زندگی گذاری اپنی موت کے بستر پر آرام پا ئیں گے۔

“اے چڑیلوں کے بچو! اِدھر آؤ!
    اے بدکار شو ہرو
    اور فاحشا ؤں کے بچو! اِدھر آ گے آؤ۔
تم میری ہنسی اڑا تے ہو۔
    مجھ پر اپنا منہ چڑھا تے ہو۔
تم مجھ پر زبان نکالتے ہو۔
    تم باغی بچے اور جھو ٹے اولاد ہو!
تم سب متبرک بلوط کے درخت کے درمیان
    اور ہر ایک ہر درخت کے نیچے جھو ٹے خدا ؤں کی پرستش کر نا چا ہتے ہو۔
تم نالوں میں
    اور چٹانوں کے شگافوں کے نیچے بچوں کو ذبح کر تے ہو۔
نالو ں کا چکنا پتھر تیرے خداوند(دیوتا) ہیں اسلئے وہ سب تیرے ہیں۔
    وہ سب تیرے لئے تجھے الاٹ کئے گئے زمین کے ٹکڑے ہیں۔
تم نے ان پر مئے کا نذرانہ انڈیلا اور اناج کا نذرانہ پیش کیا۔
    کیا مجھے یہ ساری چیزیں دیکھ کر آسو دہ ہو نا اور تجھے سزا دینی نہیں چا ہئے۔
اونچے پہاڑوں پر اپنا بستر لگاتے ہو۔
    تم وہاں جا تے ہو اور قربانی پیش کر تے ہو۔
اور پھر تم اس بستر پر جا تے ہو اور میرے خلاف گناہ کر تے ہو۔
    ان خدا ؤں سے تم محبت کر تے ہو۔ وہ خدا تمہیں پسند ہیں
ان کے ننگے جسموں کو دیکھ کر تم خو ش ہو تے ہو۔
    تم میرے ساتھ میں تھے لیکن ان کے ساتھ ہو نے کے لئے مجھ کو چھو ڑدیا۔
ان سبھی باتو ں پر تم نے پر دہ ڈا ل دیا جو تمہیں میری یاد دلا تی ہیں۔
    تم نے ان کو دروازوں کے پیچھے اور دروازے کی چو کھٹوں کے پیچھے چھپا یا اور تم ان جھو ٹے خدا ؤں کے پا س ان کے سا تھ معاہد کر نے کو جا تے ہو۔
تو خوشبو لگا کر مولک کے پاس چلی گئی
    اور اپنے آپ کو خوب معطر کیا
اور اپنے قاصدوں کو دور جگہ کے خدا ؤں کے پاس بھیجے۔
    تو نے ان کو پاتال تک بھیجے۔
10 ان باتوں کو کرنے میں تو نے کڑی محنت کی ہے۔
    لیکن پھر بھی تو کبھی نہیں تھکا۔
تجھے نئی قوت ملتی رہی
    کیوں کہ ان باتوں سے تو نے لذت لی۔
11 تو نے مجھ کو کبھی نہیں یاد کیا،
    یہاں تک کہ تو نے مجھ پر توجہ تک نہیں دی۔
پس تو کس کے بارے میں فکرمند رہا کر تا تھا؟
    تو کس سے خوف زدہ رہتا تھا؟
    تو نے مجھ سے غداری کیوں کی؟
دیکھ میں بہت دنوں سے چپ رہتا آیا ہوں،
    کیا تو نے اس لئے میرا احترام نہیں کیا ؟
12 تیری نیکی کا میں ذکر کروں گا۔
    لیکن ان سے تجھے نفع نہ ہو گا۔
13 جب تجھ کو سہارا چا ہئے
    تو تونے ان جھو ٹے خدا ؤں کو جنہیں تو نے اپنے چاروں جانب اکٹھا کیا ہے
    کیوں نہیں پکارتا ہے؟
لیکن میں تجھ کو بتا تا ہوں کہ ان سب کو آندھی اڑا دیگی
    محض ہوا کا ایک جھونکا انہیں تم سے چھین لے جا ئے گا۔
لیکن وہ شخص جو میرے سہا رے ہے،
    اور حفاظت کے لئے مجھے تلاش کرتا ہے
    زمین حاصل کریگا اور میرے کو ہِ مقدس کو پائے گا۔

خداوند کا اپنے صادقوں کی حفاظت کرنا

14 خدا کہتا ہے ، “راہ بنا ؤ! راہ تیار رکھو
    میرے لوگوں کے لئے راہ صاف کرو !
15 خدا جو بلند ہے اور جس کو اوپر اٹھا یا گیا ہے،
    وہ جو امر ہے ،
    وہ جس کانام مقدس ہے،
وہ یہ فرماتا ہے : میں ایک بلند اور مقدس مقام پر رہا کر تا ہوں،
    لیکن میں ان لوگوں کے بیچ بھی رہتا ہوں جو اپنے گنا ہوں کے سبب سے شکستہ دل اور فروتن ہیں۔
ان فروتنوں کی روح کو زندہ کروں گا
    اور پشیمان دلوں کو حیات بخشوں گا۔
16 کیوں کہ میں ہمیشہ نہ جھگڑوں گا
    اور سدا غضبناک نہ رہو ں گا۔
اگر میں ایسا کروں گا
    تو میں ان کی روحوں کو کمزور بنا دوں گا۔ اور لوگو ں سے جنہیں کہ میں نے پیدا کیا ہے زندگی کی سانس باہر چلی جا ئے گی۔
17 انہوں نے لا لچ میں گنا ہ کئے
    اور مجھ کو غصبناک کیا۔
میں نے اسرائیل کو سزا دی۔
    میں نے اسے نکال دیا
کیوں کہ میں اس پر غضبناک تھا۔
    لیکن اسرائیل اپنے راستوں پر واپس جانا جا ری رکھا۔
18 میں نے اسرائیل کی را ہیں دیکھ لی تھیں۔ لیکن میں اسے شفا بحشوں گا۔
    میں ا سکی رہبری کروں گا۔ اور اس کو اور اس کے غمخواروں کو پھر دلاسا دوں گا۔
19 ان لوگو ں کے ہونٹوں پر ستائش کے کلام لا ؤں گا۔
    میں ان سبھی لوگوں کو سلامتی دوں گا جو میرے پاس ہیں
اور ان لوگو ں کو جو مجھ سے دور ہیں۔
میں ان سبھی لوگو ں کو شفا دوں گا۔”
    خداوند نے یہ سبھی باتیں بتا ئی تھیں۔

20 لیکن شریر لوگ غضبناک سمندر کی مانند ہو تے ہیں۔
    جو خاموش اور پر سکون نہیں رہ سکتے۔
اور جس کی لہریں کیچڑوں
    اور مٹی کو گھونٹ دیتی ہیں۔
21 میرا خدا کہتا ہے،
    “شریر لوگوں کے لئے کہیں کو ئی سلامتی اور تحفظ نہیں ہے۔ ”

Urdu Bible: Easy-to-Read Version (ERV-UR)

2007 by World Bible Translation Center

Isaiah 57New International Version (NIV)

57 The righteous perish,
    and no one takes it to heart;
the devout are taken away,
    and no one understands
that the righteous are taken away
    to be spared from evil.
Those who walk uprightly
    enter into peace;
    they find rest as they lie in death.

“But you—come here, you children of a sorceress,
    you offspring of adulterers and prostitutes!
Who are you mocking?
    At whom do you sneer
    and stick out your tongue?
Are you not a brood of rebels,
    the offspring of liars?
You burn with lust among the oaks
    and under every spreading tree;
you sacrifice your children in the ravines
    and under the overhanging crags.
The idols among the smooth stones of the ravines are your portion;
    indeed, they are your lot.
Yes, to them you have poured out drink offerings
    and offered grain offerings.
    In view of all this, should I relent?
You have made your bed on a high and lofty hill;
    there you went up to offer your sacrifices.
Behind your doors and your doorposts
    you have put your pagan symbols.
Forsaking me, you uncovered your bed,
    you climbed into it and opened it wide;
you made a pact with those whose beds you love,
    and you looked with lust on their naked bodies.
You went to Molek[a] with olive oil
    and increased your perfumes.
You sent your ambassadors[b] far away;
    you descended to the very realm of the dead!
10 You wearied yourself by such going about,
    but you would not say, ‘It is hopeless.’
You found renewal of your strength,
    and so you did not faint.

11 “Whom have you so dreaded and feared
    that you have not been true to me,
and have neither remembered me
    nor taken this to heart?
Is it not because I have long been silent
    that you do not fear me?
12 I will expose your righteousness and your works,
    and they will not benefit you.
13 When you cry out for help,
    let your collection of idols save you!
The wind will carry all of them off,
    a mere breath will blow them away.
But whoever takes refuge in me
    will inherit the land
    and possess my holy mountain.”

Comfort for the Contrite

14 And it will be said:

“Build up, build up, prepare the road!
    Remove the obstacles out of the way of my people.”
15 For this is what the high and exalted One says—
    he who lives forever, whose name is holy:
“I live in a high and holy place,
    but also with the one who is contrite and lowly in spirit,
to revive the spirit of the lowly
    and to revive the heart of the contrite.
16 I will not accuse them forever,
    nor will I always be angry,
for then they would faint away because of me—
    the very people I have created.
17 I was enraged by their sinful greed;
    I punished them, and hid my face in anger,
    yet they kept on in their willful ways.
18 I have seen their ways, but I will heal them;
    I will guide them and restore comfort to Israel’s mourners,
19     creating praise on their lips.
Peace, peace, to those far and near,”
    says the Lord. “And I will heal them.”
20 But the wicked are like the tossing sea,
    which cannot rest,
    whose waves cast up mire and mud.
21 “There is no peace,” says my God, “for the wicked.”

Footnotes:

  1. Isaiah 57:9 Or to the king
  2. Isaiah 57:9 Or idols
New International Version (NIV)

Holy Bible, New International Version®, NIV® Copyright ©1973, 1978, 1984, 2011 by Biblica, Inc.® Used by permission. All rights reserved worldwide.

Viewing of
Cross references
Footnotes